بٹوارے کے زخم سے ٹپکتا لہو! ـ

تحریر: یاسر خالق پچھتر برس قبل جب برصغیر پر برطانوی سامراج کی نوآبادیاتی استحصالی گرفت کمزور ترین سطح پر آ پہنچی تب “تقسیم کرو اور حکمرانی کرو” کا کلیہ “تقسیم کرو اور سامراجیت و سرمایہ داری کو بچاؤ” تک پہنچ کر خونی تقسیم کا روپ دھار گیا۔ برطانوی سامراج نے اپنی ناک تلے برصغیر کے …

Read more

آٹومیشن ، مصنوعی ذہانت اور مارکس (آخری حصہ)

کیا ٹیکنالوجی کی جدت نے مارکس کے نظریات کو متروک کر دیا؟ تحریر: الطاف بشارت آٹومیشن اور مصنوعی ذہانت اٹھارویں صدی کا صنعتی انقلاب کام کرنے والی مشین سے شروع ہوا. یہ ذرائع پیداوار کی تاریخ میں تیز رفتار ترین ترقی کا عہد ثابت ہوا. صنعتی انقلاب وہ عہد تھا جس نے ماضی کی تمام …

Read more

آٹومیشن ، مصنوعی ذہانت اور مارکس کیا ٹیکنالوجی کی جدت نے مارکس کے نظریات کو متروک کر دیا (حصہ دوئم)

تحریر : الطاف بشارت ارتکاز سرمایہ دارانہ نظام کی بنیادی حرکیات ارتکاز کی حرکیات ہیں جن کے ذریعے سرمایہ دارانہ طرز پیداوار مسلسل پھیلتی رہتی ہے. “ارتکاز ارتکاز! یہی موسیٰ ہے یہی پیغمبر! صنعت اجناس کی پیداوار کو آراستہ کرتی ہے جس کاذخیرہ ہوتا رہتا ہے اس لیے زیادہ سے زیادہ محفوظ کرنا یعنی قدر …

Read more

آٹومیشن، مصنوعی ذہانت اور مارکس (کیا ٹیکنالوجی کی جدت نے مارکس کے نظریات کو متروک کر دیا؟)

تحریر: الطاف بشارت (حصہ اول) مارکس کے جنازے پر خطاب کرتے ہوئے اینگلز نے کہا تھا: “جس طرح ڈارون نے نامیاتی فطرت کے قانونِ ارتقاء کی دریافت کی تھی اسی طرح مارکس نے انسانی تاریخ کے ارتقاء کا قانون دریافت کیا؛ وہ سادہ حقیقت جسے نظریات کی حد سے زیادہ بالیدگی نے چھپا دیا تھا …

Read more

آٹومیشن اور ذرائع پیداوار کی سرمایہ دارانہ نجی ملکیت کا تضاد

مشترکہ تحریر کبیر خان اینڈ یاسر خالق اٹھارویں صدی کے وسط سے رونما ہونے والے صنعتی انقلابات نے ذرائع پیداوار، پیداوار اور سماجی ارتقاء میں ایک ایسی معیاری جست کو جنم دیا جس کے نتیجے میں یورپ اور دنیا کے دیگر خطوں میں جدید صنعتی معاشروں اور ریاستوں کا قیام عمل میں آنا شروع ہوا۔ …

Read more

مارکس کا پرولتاریہ باشعور کیوں نہیں ہو سکا: ”اپنے اندر طبقہ ہونے“ سے ”اپنے لئے طبقہ بننے“ کی جدلیات۔

تحریر: واصف اختر مارکس نے طبقاتی شعور کی وضاحت کرتے ہوئے اس کے دو مدارج بیان کئے ہیں۔ یعنی محنت کش عوام کا ”اپنے اندر طبقہ ہونے“ سے لے کر ”اپنے لئے طبقہ بننے“ تک کا سفر۔ ان دو مدارج پر بہت سی بحث موجود ہے، جسے پڑھنا چاہیے۔ بہرحال یہاں گزارش یہ ہے کہ …

Read more